nikkah - نکاح نامہ میں ختم نبوت کا خانہ شامل کرنے کافیصل

مسلم فیملی لاء میں ترمیم کا فیصلہ، نکاح نامہ میں ختم نبوت کا خانہ شامل کیا جائے گا۔
محکمہ بلدیات کی جانب سے نکاح نامے میں ختم نبوت کا خانہ شامل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، نکاح نامے پر دستخط کرنے والے تمام دلہا ، دلہن اور گواہان کو بھی ختم نبوت کا سرٹیفکیٹ دینا ہوگا۔
ذرائع کا کہنا ہےکہ فیصلہ پنجاب اسمبلی کی منظور شدہ قرار داد کی روشنی میں کیا گیا۔
واضح رہے کہ27 اکتوبر کو پنجاب اسمبلی میں نکاح نامے کے فارم میں ختم نبوت کا حلف شامل کرنے کی قرارداد متفقہ طور پر منظور کی گئی تھی، قرارداد کے متن میں کہا گیا تھا کہ مسلمان اور غیر مسلم (قادیانی وغیرہ)میں فرق واضح کرنے کیلئے نادرا فارم اور پاسپورٹ فارم میں مندرج حلف نامے کی طرز کا فارم نکاح نامے کے حلف میں بھی شامل کیاجائے۔
یہ حلف نامہ یوں ہے کہ”‘میں مسلمان ہوں اور نبی حضرت محمد ﷺ کے آخری، حتمی اور غیر مشروط خاتم النبیین ہونے پر ایمان رکھتا/رکھتی ہوں،میں ایسے کسی بھی شخص کو نہیں مانتا/ مانتی جو محمدﷺ کے بعد لفظ نبی کی کسی بھی تشریح یا کسی بھی ممکنہ حوالے سے نبی ہونے کا دعویٰ کرے ، یا نبوت کے ایسے مدعی کو نبی یا مذہبی مصلح، یا مسلمان نہیں مانتا/ مانتی ہوں، میں مرزا غلام احمد قادیانی کو جھوٹا نبی سمجھتا/سمجھتی ہوں اور اس کے لاہوری یا قادیانی گروپ سے تعلق رکھنے والے پیروکاروں کو غیر مسلم سمجھتا/سمجھتی ہوں”‘۔